explicit knowledge can be transformed into tacit knowledge and vice versa

The effective high sides for useful knowledge as a systematic process for acquiring developing with integration sharing  of knowledge and the sources of learning creating knowledge contains importance, the tacit knowledge as ideas express of knowledge that is outside of known capabilities and the capabilities transform into written form is Explicit knowledge. Implicit knowledge is dimensions type and required to convert in explicit knowledge.……….. for more Download the Article

Dr. Nix

Advertisements

What Kashmir Wants ?

Srinagar: The 16th day of curfew held in Indian Occupied Kashmir by Indian Army. The people of Kashmir are suffering from the hungriness and suffering from the medicines, the kids are not able to going school in Srinagar. The Violation of Human rights by the Indian Army so called the UNO urgent call on the Kashmir Issue August 2019.

The Kashmir geographical position now in three areas. first part of the Kashmir is under control of the India; the second area of Kashmir is belonging to the China since in 1962 China India war. The 3rd area of Kashmir is under control of the Pakistan admiration.

The Most population of Kashmir is on Islamic believes and known as Muslims, the Religious events are as same to the Pakistani Muslims. The Indian army raised their oppression in Kashmir and rapped by the Indian Army which is open violation of Human rights in Kashmir. Many Kashmiris Lost their eyes in ballet guns firing by the Indian Army on arm less innocents Kashmiris. The seven lack Indian Army are holed the Kashmir. But the Question is that, What Kashmiris wants? They want a free and Peaceful territory of land of Peace. Kashmiris wants food for their kids, Kashmiris wants education for their Children’s future. But the India Army does not allow Kashmiris as human being. Almost 5 Lack innocent Kashmiris are killed by the Indian Army in Kashmir.

The Beijing China on Friday explored and re-break its silence for Kashmir and represents china resolution on the rights of Kashmiri People. The Dialogues between India Pakistan on Kashmir issue called by the UN and the Organization of Islamic Cooperation also ask the impressions on Kashmir issue.
“China has noted the relevant report. China’s position on the Kashmir issue is clear-cut,” Chinese Foreign Ministry Spokesperson Lu Kang said when asked about the OIC statement calling for UN involvement in the issue. “The Kashmir issue is leftover from history. China hopes India and Pakistan can increase dialogue and communication and properly handle relevant issues and jointly safeguard regional peace and stability,” he said.
China has officially maintained a Humanitarian  position on the Kashmir issue.

USA; Before As the USA Trump told to Prime Minister of Pakistan as Indian Modi requested Trump for Arbitrator in Kashmir. But the Government of India has denied to USA Trump. Question raised here that, why India is NOT ACCEPTING as India Modi had told to Trump USA President about Mediator if Kashmir Issue.

Who is Lier? USA’s Trump or Indian Modi…… But the Observers submitted the another review on Kashmir Issue that Indian Establishment and the interests of World Economy Boosters are required peace in South Asia region and the Afghanistan issues as safe return of USA from Afghanistan is integral essence of Economy plan as the Silk route also requested resilience in Kashmir. India also facing the economic crisis and people of India are sustaining under poorness and neglected help of the Government, as the inner goal of Indian Establishment will be clear as soon which is agree-ness to withdraw on Kashmir issue which is faced by Indian since a time, Now Kashmir Issue Becomes as Cancer for India establishment so, something has to be delivered to Indian people as political role back in Kashmir. The strategic position of Russia is in favor of Kashmir Issue solutions, The Kashmir will become as Independent Country soon and the UNO allied forced will take over control in Kashmir till power transaction time. Mainly the Kashmiris are Muslims are they Desired to be Live with Pakistan on context of Religious and customs basis. The Referendum in Kashmir is necessary for freedom of expressions. Now it’s time to conclude the Voice of Kashmir Liberation to support the Human rights.      

#DrNix

Knowledge Management: Philosophy, Processes, and Pitfalls … Lesson #8 Explanation.

Download Here:  Lessons from the Management of Knowledge .pdf

or Link for article : https://cmr.berkeley.edu/search/articleDetail.aspx?article=4567D

Dr. Nix’s  ” Opinion ”  for Lesson # 8 :

There were eight lessons in the article regarding different traps to which even the best firms falls victim and as far as my understanding from those lessons have developed, the most important lesson seems to be the lesson no. 4 i-e, To ensure that informal networking is less susceptible to randomness, it should be made more structured.

Justification:

As per the literature review of this article and also from the information obtained from different other sources, this fact has been established that the core requirement of the effective knowledge management is a well maintained & comprehensive formal database of the information which exists in any organization but solely, this formal database won’t be sufficient for an ideal knowledge management. In addition to formal database, there also remains a need of information via informal networking i-e, to obtain information which couldn’t be obtained from other documented sources such as company magazines, websites, manuals & databases such as via personal networks or social interactions. However, it is certain that there would always be a risk of unreliability and manipulation involved in informal networking, hence, a formal database would help to distinguish between the reliable & unreliable sources so that the employees can easily identify the person who can prove to be a reliable source of provision of desired information.

In addition to that, lesson number 4 demonstrates that the most reliable type of informal networking is to conduct structured informal meetings among employees on a frequent basis. Employees shall get together over an informal meeting or breakfast and share their experiences or the mistakes which they have incurred while performing their duties. By doing this, the new knowledge would be discovered because people would get a chance to adopt the good and successful practices of others and the mistakes would be diminished because the people would be able to learn from the other’s mistakes or their poor experiences.

Thus, it can be concluded that effective knowledge management comprises of both informal & formal sources subject to a condition that informal networking shall be structured rather than being random in nature and reliable information gathered through informal networking aided by comprehensive formal databases would be able to constitute an environment which will lead to the development of unique & innovative ideas and prove to be beneficial for the organization.


Your Comment 

Thanks from Dr. Nix

The Eleven Deadliest Sins of Knowledge Management and Explanation of 5 & 6

Ref: CALIFORNIA MANAGEMENT REVIEW VOL 40, NO. 3 SPRING W98 269

The Eleven Deadliest Sins of Knowledge Management

Error 5: Paying Little Heed to the Role and Importance of Tacit Knowledge.
A ”head centered” (or perhaps. more accurately. an embodied) view rec—
ognizes the central role of tacit knowledge in shaping and influencing explicit
knowledge. Tacit knowledge entails a body of perspectives (e.g.. our view of
customers is framed by our firm’s experience in North America). perceptions
(customers seem disinclined to try our new product). beliefs (investment in new
technology will lead to breakthrough new products that will create new cus—
tomer needs). and values (do what is right for the customer). Tacit knowledge
is the means by which explicit knowledge is captured. assimilated. created. and
disseminated.
 
Yet in spite of the emphasis upon tacit knowledge in both traditional epis-
temology and the recent knowledge management literature, organizations seem
especially reluctant to grapple with its management. One unfortunate conse-
quence is that in redoubling their commitment to managing explicit knowledge,
organizations discover to their dismay that their efforts are thwarted by the very
phenomenon they choose to downplay or ignore. As more emphasis is placed
upon refining and extending customer satisfaction surveys, managers’ percep-
tions, projections, and values intervene to preclude any genuinely new insights
into customers’ behavior. 
The most profound reason for this error is that managers simply do not
understand the nature of. tacit knowledge, its attributes, or its consequences.
Thus, although they admit it is ”there,” they fear it is inaccessible and impossible
to influence. Thus, their own tacit knowledge about knowledge serves to limit
their understanding of the real nature of knowledge—both tacit and explicit.
If this error persists, the development and leveraging of explicit knowledge is largely stifled. Consider the following case. One organization considered
its extensive services to be the dominant reason its customers continued to do
more business with it. In in-depth interviews with many of these customers,
however, service was ranked as only the fifth or sixth most important purchase
criterion. Yet, key members of the management team not only refused to believe
the interview findings, they steadfastly refused to entertain the possibility that
their long-held semi-tacit assumption might be wrong.

Justification:

The required facts regarding fetching the obligations prevail for straightforward Knowledge and implied mechanisms of KM which are being stated endorsed differences for organizational utilization as considering the silence of audience  to be required the revisited to KM to accurate perceiving and sense the untold circumstances of KM before transducer as client in knowledge management’s prime depth from Above the feeling, perceptions of the customers on actual demands and not capable  to understanding the senses of knowledge tactics except accruing and circulating.   

 

 

Error 6: Disentangling Knowledge from Its Uses
 
Knowledge is about irnbuing data and information with decision- and
action-relevant meaning. This is the vital role of human intervention.4 Informa—
tion about customers becomes knowledge when decision makers determine how
to take advantage of the information. In this way, knowledge is inseparable from
thinking and acting (see Error 7).
 
Yet many organizations disconnect knowledge from its uses. A major
manifestation of this error is that so-called knowledge initiatiVes, projects, and
programs become ends in themselves. Data warehousing, customer satisfaction
surveys, and industry scenarios degenerate respectively into technological chal-
lenges, management games. and clashes among proponents of different scenario
methodologies. Their relevance for decisions and actions gets lost in the turmoil
spawned by debates about appropriate data structures, best survey designs, and
alternative techniques for imagining specific industry futures.
 
This error arises directly from a number of decisively false assumptions in
the way many organizations approach knowledge management. First, access to
information is not equivalent to insight, value, or utility. Examples of managers
recognizing in retrospect how they should have derived insight from particular
data and information are legend in every company. Second, the value of data

Justification :

The part of the discussion becomes very convoluted  to be explanation in which the unravel the options of the Knowledge Management, the collection of the information are not defined the parameters to maximization of the business performance in the Market to survive the conditional competitive challenges to expand the demanded attractions and resources coordinates of Knowledge setting goals, The technique of the KM performance in specific business tasks dynamics development hedges in various dimensions on cost raised, resultantly the goals not prosecuted under chaotic processing of KM inside to keeping distinct  from Knowledge engender or makers, the true  knowledge fest furnished when client come into cross discussion.

References:

  1. The Eleven Deadliest Sins of Knowledge Management Liam Fahey, Laurence Prusak , California Management Review, Sega Journal online
  2. The Eleven Deadliest Sins of Knowledge Management , http:// scinapse.io
  3. 11 Sins of Knowledge Management India community Journal/ Video
  4. Knowledge Jolt with Jack, online
  1. Deadly Sins That Will Turn Your Knowledge Management System Into A Ghost Town/ bloom fire

 

+ Explanation of 5 & 6 by Dr. Nix ( Aziz Nizamani)

Knowledge Management and its Levels in Urdu for Blue Colors

Knowledge Management and its Levels in Urdu,  TransWritten by Dr. Aziz Nizamanikm11

چار نظریاتی علم کی سطح

ہمارے علم کا استعمال مختلف ہوتی ہے کہ یہ کس طرح منظم اور سمجھا جاتا ہے. خاص طور پر، ہم چار تصوراتی سطح پر علم کا انتظام کرتے ہیں. ہمارے نظریات جہاں ہمارے روزانہ کام میں فٹ ہوتے ہیں ان کے نقطہ نظر بہت اہم ہیں کیونکہ ہم اپنے آپ کو اور اپنے ساتھیوں کو اعلی معیار، تخلیقی، اور استحکام کے ساتھ انجام دینے کے لئے لازمی معلومات کے ساتھ فراہم کرتے ہیں. چار سطحیں بھی اہمیت رکھتے ہیں جب ہم سمجھتے ہیں کہ ہمارے ارد گرد کیا ہوتا ہے جب لوگ علم کا استعمال کرتے ہیں اور جب ہم اس بات کا اندازہ کرتے ہیں کہ وہ مختلف کاموں کے بارے میں کتنے واقف ہیں اور کس قسم کی معلومات کی ضرورت ہوتی ہے. ہم پوچھتے ہیں: “آپ کو کیا پتہ ہے، اور آپ کو فیصلہ کرنے اور اپنے کام کو کرنے کے لئے، اسے جاننے کی کیا ضرورت ہے؟” یہ معاملات الگ الگ ہیں. ہمیں کیا جاننا ہے ہم اس کے کاموں کا ایک براہ راست فنکشن ہے. ہمیں یہ جاننے کی ضرورت ہے کہ اس کا کام کرنے کے لۓ ہم اس سے زیادہ کام کرتا ہے. کیا ہم اپنے علم سے واضح طور پر اور محتاج طور پر سبب بنانا چاہتے ہیں؟ کیا ہم اچھی طرح سے تیار کردہ فیصلے پر مبنی فوری فیصلے کرنا چاہتے ہیں؟ کیا ہمیں اپنے عام کام کے بہاؤ کے حصے کے طور پر سمجھدار فیصلوں کے بغیر خود کار طریقے سے حالات کو سنبھالنے کی ضرورت ہے؟ اس کے بہت سے اختیارات موجود ہیں کہ ہم کس طرح علم کا استعمال کرنا چاہتے ہیں اور اس وجہ سے، ہمیں ڈگری حاصل کرنے کی ضرورت ہے یا ہماری انگلیوں پر. سنجیدگی سے متعلق نقطہ نظر سے، ہم اپنے مقاصد اور عقائد کو تشکیل دینے کے لئے منتخب شدہ، اکثر جزوی نظریات اور جدید نظریات میں انتہائی نمائندگی کے لئے استعمال کرتے ہیں. ہماری بصیرت “کس چیزیں کام کرتے ہیں” میں رہنمائی کرنے کے لئے ہم دوسرے علم کا استعمال کرتے ہیں جو شاید نظریاتی اور عام اور اکثر بہتر سمجھتے ہیں. واضح علم ہے جو ہمارا کام انجام دیتا ہے براہ راست اس سے متعلق ہے جو جانبدار فیصلے کرنے اور فیصلے کرنے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے. آخر میں، ہمارے پاس کچھ علم ہے جس کے ساتھ ہم اتنا واقف ہیں کہ ہم نے اسے خود کار طریقے سے بنایا ہے اور سوچنے کے بغیر اسے استعمال کرنے کے قابل ہیں. اس طرح، ہم چار نظریاتی سطحوں پر علم کا استعمال کرتے ہیں: اہداف یا نظریاتی علم یا تصور اور پیراگم علم. اس علم کا حصہ ہمیں اور واضح طور پر معلوم ہے – ہم اس کے ساتھ شعور سے کام کرتے ہیں. اس میں سے اکثر، ہمارے خیالات کو معلوم نہیں ہے؛ اس کے بجائے، یہ ٹاسک ہے اور صرف ناقابل رسائی قابل رسائی ہے. ہم اس علم کا استعمال کرتے ہیں کہ کیا ممکن ہے اور اپنے مقاصد اور اقدار کو پیدا کرنے کے لئے استعمال کریں. (“WHY کے بارے میں علم” مثالی اور قابل حاصل ہے.)

نظاماتی علم یا نظام، سکیم، اور حوالہ طریقہ کار علم. بنیادی نظام:

عام اصولوں اور متعلقہ مسئلہ حل کرنے کی حکمت عملی کی ہماری نظریاتی معلومات بڑی حد تک واضح اور ہمارے لئے معروف ہے. ہم اس علم کا تجزیہ کرنے اور نئے نقطہ نظر اور متبادل کو سنبھالا کرنے کے لئے استعمال کرتے ہیں. (“علم یہ ہے کہ” یہ ممکن ہے، طریقہ کار موجود ہے، اور یہ حاصل کیا جا سکتا ہے.)

ہم کس طرح علم اور منظم رکھنا

عملی علم یا فیصلہ سازی اور حقیقت علم (جاننے والا):

 فیصلہ ساز علم عملی اور زیادہ تر واضح ہے؛ یہ اکثر سکرپٹ پر مبنی ہے جو ہم اچھی طرح جانتے ہیں. ہم اپنے روزانہ کام انجام دینے اور واضح فیصلے کرنے کے لئے اس علم کا استعمال کرتے ہیں. (“علم ہاؤ” کو حاصل کیا جاسکتا ہے.)

خودکار علم یا معمولی کام کرنا علم. ہم یہ علم اتنی اچھی طرح جانتے ہیں کہ ہم نے اسے خود کار طریقے سے بنایا ہے – سب سے زیادہ ٹاسک بن گیا ہے. ہم خود کار طریقے سے شعور استدلال کے بغیر کاموں کو انجام دینے کے لئے استعمال کرتے ہیں.

خودکار علم یا معمولی کام کرنا علم.

 ہم یہ علم اتنی اچھی طرح جانتے ہیں کہ ہم نے اسے خود کار طریقے سے بنایا ہے – سب سے زیادہ ٹاسک بن گیا ہے. ہم خود کار طریقے سے شعور استدلال کے بغیر کاموں کو انجام دینے کے لئے استعمال کرتے ہیں.

مثال کے طور پر استعمال کرتے ہوئے مختلف نظریاتی علم کی سطح کی فطرت اور استعمال کی وضاحت کرسکتے ہیں. ان مثالوں میں، ہم نے تجویز کیا ہے کہ کونسیئر اور سینئر کنٹرول انجنیئر مختلف سطحوں پر جان سکتے ہیں. بہت علم کے بارے میں جو جونیئر انجنیئر زیادہ اعلی، کم واقف اور قابل رسائی سطح کا علم رکھتا ہے وہ زیادہ ماہر ویر انجینئر کے ذہن میں کم، زیادہ عملی اور واقف علم کی سطح پر منتقل ہوتا ہے. یہ ارتقاء عام ہے کیونکہ لوگ مہارت حاصل کرتے ہیں.

مقصد کے حصول یا تشخیصی معلوماتی – نظریہ اور پاراگرم علم:

اعلی درجے کی گول کی ترتیب کی ترتیب یا مثالی طور پر علم ہماری سوچ اور حوصلہ افزائی کرتا ہے، ہمیں اپنے مقاصد اور نظریات کو پیدا کرنے میں مدد ملتی ہے، اور ہمیں ایسے بصیرت فراہم کرتی ہے جو ہمیں کئی نظریات سے متعلق حالات کو پورا کرنے میں مدد کرتی ہیں. ایک بڑی حد تک، اس طرح کے علم کو “ہمیں کیا لگتا ہے ممکن ہے اور خواہش مند ہے” اور “جو ہم سوچتے ہیں وہ سب سے بہتر ہے جو حاصل کیا جاسکتا ہے.” مقصد کی ترتیب علم یہ ہے کہ تخیل آگیا ہے! جب ہم وجہ سے یا مسائل کو حل کرتے ہیں، جب ہم حکمت عملی کے نقطہ نظر کو منتخب کرتے ہیں تو، جب ہم نئی حکمت عملی تلاش کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو، ہم عام طور پر ہمارے مثالی علوم سے چلتے ہیں. اس انتہائی باضابطہ علم کی مثال میں شامل ہیں: • کاروبار کس طرح منظم اور منظم کیا جا سکتا ہے – جس کی مصنوعات، مسابقتی حکمت عملی، عملیاتی طریقوں، عملے کے طریقوں، کارپوریٹ ثقافت کی ضروریات کی ضرورت ہوتی ہے – – غیر متفق کاروباری رہنما بننے کے لئے. • مجموعی معیار کے انتظام کا تعاقب کرنے کے لۓ نئے نقطہ نظر، نئی اقدار، نئے فیصلوں کی ضرورت، پرانے فیصلوں کو باطل کردیا، نئے طریقوں، نئے تشویشات وغیرہ. • علم کس طرح دفتر اور علم کا کام مثالی طور پر انجام دیا جاسکتا ہے اور یہ مقصد کس طرح حاصل ہوسکتا ہے آہستہ آہستہ نئے کام کے طریقوں اور معاونت کے اوزار متعارف کرایا. • جس چیز کی توقعات، فوائد، اور نقصانات کی وجہ سے مخصوص اشیاء کی تجارت کرتے وقت مختلف اعلی درجے کی خطرے سے متعلق مینجمنٹ کی حکمت عملی کا پیچھا کر سکتا ہے.

علم مینجمنٹ بنیادیں: سوچنے کے بارے میں سوچتے ہیں – کس طرح لوگوں اور تنظیمیں علم، تخلیق، اور علم کا استعمال کرتے ہیںہم بڑے پیمانے پر مثالی طور پر دو طریقوں سے علم کا استعمال کرتے ہیں: (الف) مثالی طرف ہماری حوصلہ افزائی اور اعمال کو ہدایت کرتے ہیں جو ہم سمجھتے ہیں اور ہم اس پر عمل کرنا چاہتے ہیں؛ اور (ب) وسیع نظریات کے ساتھ صورت حال کے جسٹر کو فراہم کرتے ہیں جو ہمیں اس کی تازہ کاری کرنے کی اجازت دیتا ہے (یعنی، ریفرنس کی شرائط کو تبدیل کرنے کے لئے). ہم اپنے مثالی نظریات کے بارے میں بہت زیادہ عقائد کو بھی بنیاد بناتے ہیں. اس کے علاوہ، “پیداواری اور آزمائش” صورت حال میں، ہم اس علم کا استعمال کرتے ہیں کہ ہم متبادل کے مطابق فیصلہ کرنے کے لۓ نئے متبادل اور اعلی سطح (نانٹیکیکل) معیار کو پیدا کرنے کے لئے دونوں مقاصد کو فراہم کریں.ہم بہت سے مختلف ذرائع سے مثالی طور پر علم حاصل کرتے ہیں. ذاتی سطح پر ہم پڑھتے ہیں، بات چیت کرتے ہیں، دیکھیں کہ دوسروں نے کیا کیا ہے، اور جب ہم اس کے بارے میں وضاحت کرتے ہیں تو اس کی نظر اور پیراگراف پیدا ہوسکتے ہیں. کارپوریٹ سطح پر ہم بینچمارک اور داخلی ترقی کے ذریعے مثالی طور پر علم حاصل کرتے ہیں اور علمی افراد کی نظر سے. مثالی طور پر علم کا ایک اہم پہلو تنظیم کے مقاصد اور مقاصد اور ان کے ڈیوٹیفیکٹس کے بارے میں سمجھا جاتا ہے جو ہر ایک کے اعمال اور فیصلوں کی رہنمائی کرنا چاہئے. جب ہم تلاش کرتے ہیں یا تخلیق کرتے ہیں تو ہم سنبھالتے ہیں اور مؤثر ثابت ہوتے ہیں. نقطہ نظر کے لئے، تخلیقی اور واقعی قابل قدر ہونے کے لئے، تجزیہ لازمی طور پر ایک نقطہ نظر پر مبنی ہونا ضروری ہے. لہذا، کسی بھی مسئلے سے حل، ڈیزائن، یا فیصلہ سازی کے عمل کے حصے کے طور پر اس طرح کی نظروں کی ترقی کو سہولت دینے میں بہت اہمیت ہوتی ہے. تاہم، چونکہ ہم ہمیشہ نئے مسائل اور فیصلے کے چیلنجوں سے پیش کیے جاتے ہیں، چیلنج کے بعد متعلقہ نظریات کو تیار کرنے کے لئے یہ اکثر ناممکن ہے. نتیجے کے طور پر، کسی بھی ذہین عملدرآمد شخص یا تنظیم میں، مختلف قسم کے حالات میں کیا جا سکتا ہے اس کے بارے میں رائے اور فیصلوں کے اشتھاراتی ترقی کی سہولت کے لئے مقصد کی ترتیب مثالیاتی علم کی ایک وسیع انوینٹری کو پری نصب کرنے کے لئے بہت ضروری ہے . وسیع فیلڈ ان نقطہ نظروں کا احاطہ کرتا ہے، وہ زیادہ قیمتی ہیں.

سیسمیٹک کلیج – نظام، سکیم، اور حوالہ طریقہ کار علم:

منظم علم عام ماڈل فراہم کرتی ہے اور اس کے بارے میں سمجھنے والے منظم اور نظریاتی پس منظر، حالات اور حالات جن کے ساتھ ہم معاہدے کرتے ہیں، خاص طور پر پیچیدہ ہیں. یہ ہماری سمجھ میں شامل ہے کہ تمام قسم کے نظام کیسے کام کرتی ہیں، یہ ہے کہ، ان کی داخلی میکانیزم کیا ہے اور ان کی رویے کا امکان کب ہوتا ہے جب اس کی بناوٹ یا “خراب ہو.” یہ علم ہمیں بھی طریقوں کے ساتھ فراہم کرتا ہے اور اس کے اصولوں کے ساتھ ہمیں ہدایت کرتا ہے کہ ہم کس طرح حالات کو ہینڈل کریں. منظم علم کے منتخب کردہ مثال میں شامل ہیں: • تنظیم سازی کے نظام کو کس طرح کام کرتے ہیں اور عمل کرتے ہیں، کس طرح لوگ بات چیت کرتے ہیں، کس طرح ثقافتی تبدیلیوں کو نافذ کیا جا سکتا ہے، اور خاص طور پر تبدیلیوں سے کیسے اثر انداز ہوسکتا ہے، وغیرہ. • بنیادی سائنس، مخصوص علوم، سائنسی علم اصول، ریاضی، درجہ بندی کے نظام، وغیرہ.

ہم کس طرح علم  منظم اور پکڑو

  • کس طرح دوستانہ سماجی بات چیت عام طور پر منعقد کی جاتی ہیں اور اس کی ترقی کے امکانات کے لئے اسکیماس اور اسکرپٹ. • جدید مینجمنٹ کے طریقوں کو حاصل کرنے کے لئے اسکیماس اور اسکرپٹ جیسے مجموعی معیار یا کاروباری عمل دوبارہ ریجنائننگ. • خطرے کے انتظام کی حکمت عملی کو کس طرح لاگو کرنے کے لئے طریقوں. • تحقیقات یا دوسرے قسم کے کام کے ساتھ کیسے آگے بڑھنے کے لئے طریقہ کار. • مختلف قسم کے استدلال، دشواری حل کرنے اور فیصلہ سازی کے لئے اسکیماس اور اسکرپٹ. ہم پس منظر اور حوالۂ علم کے طور پر منظم حالات کو غور کے تحت حالات کے مخصوص پہلوؤں کی تحقیقات کے لئے گہرائی تجزیہ کے طور پر استعمال کرتے ہیں. مندرجہ بالا مثال کے طور پر، ہمارے منظم علم کو ہمارے پورے جسم کو علم حاصل ہوتا ہے اور تمام قسم کے استدلال اور مسئلہ حل کرنے کے مقاصد کے لئے استعمال کیا جاتا ہے. مثال کے طور پر، “تخلیق اور آزمائش” استدلال کے حالات میں، ہم پیدا شدہ حل کی تفصیلات کو تیار کرنے اور ان کی جائزی کی جانچ کرنے کے متوقع رویہ کا اندازہ کرنے کے لئے دونوں نظاماتی علم کا استعمال کرتے ہیں. منظم طریقے سے کئی طریقوں سے حاصل کیا جاتا ہے. عام طور پر، ہم اس طرح کے علم کو حاصل کرنے کے معیاری موڈ کے طور پر تعلیم کے بارے میں سوچتے ہیں. تاہم، یہ خود مطالعہ سے وسیع پیمانے پر تیار کیا جاتا ہے اور جب ہم مشاہدات سے سکرپٹ تخلیق کرتے ہیں اور عام طور پر ہم اس سے سکرپٹ سے سکیماماس پیدا کرتے ہیں.

تشہیر کی خبر – فیصلے اور حقیقت :

اس سطح پر علم قوانین، حقائق اور واضح نظریات پر مشتمل ہوتا ہے جو ہم سمجھتے ہیں جب ہم وجہ سے اور اپنے عام علم کے کام کے ایک حصے کے طور پر فیصلہ کرتے ہیں. بڑی حد تک، یہ “کس طرح سے” علم اور “جانتا ہے.” عملی طور پر علم کی مثالیں شامل ہیں:

  • معلومات کے ذمہ داری کے علاقے کے اندر عام طور پر واقع ہونے والی انتظامی حالتوں سے نمٹنے کے بارے میں معلومات. • تجارتی ٹیموں کو منظم اور نگرانی کے بارے میں تجربہ کار ٹیم کے رہنما کے ماہر علم. • کسی عام کام کے روزانہ پہلوؤں کو انجام دینے کے بارے میں معلومات، جیسے کمپیوٹر کو چلانا اور مطلوبہ اثرات حاصل کرنے کے لئے انٹر دفتر آفس کو کیسے لکھ سکیں. • ہدایت کے ساتھ ان کو فراہم کرنے، ان کو حوصلہ افزائی، ان کے کام کی نگرانی، وغیرہ کے بارے میں کس طرح معلوم کرنے کے بارے میں معلومات. عملی علم کو براہ راست استعمال کرنے کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے جو فیصلے پر مبنی ہے. ہم ہر وقت اس قسم کا علم استعمال کرتے ہیں. جب بھی ہم اپنے علم کے کام کو انجام دینے کے لئے شعور سے متعلق ہیں، یا کسی دوسرے صورت حال میں، ہم اپنے عملی علم پر مبنی ہیں. “پیدا اور امتحان” صورت حال میں، ہم واضح طور پر وجہ سے عملی طور پر علم کا استعمال کرتے ہیں

علم مینجمنٹ بنیادوں: سوچنے کے بارے میں سوچنے – کس طرح لوگوں اور تنظیموں کی تخلیق، نمائندگی، اور علم کا استعمال

اس طرح کے چیزوں کے بارے میں جس چیز کو ہم تخلیق کرتے ہیں وہ اگلے متبادل میں ہونا چاہئے، اس کی طاقت اور کمزوریاں کیا ہوسکتی ہیں، اور اسی طرح. ہم بہت سے ذرائع سے عملی معلومات حاصل کرتے ہیں. ہم اسے تربیت، کچھ تعلیم سے حاصل کرتے ہیں، اور جب ہمارے شریک کارکن ہمیں بتاتی ہیں کہ چیزیں کس طرح کام کرتی ہیں اور کیا ہوتے ہیں. جب ہم چیزیں کام کرتے ہیں اور ہم ان سے نمٹنے کے لئے کی ضرورت ہوتی ہے تو ہم سمجھتے ہیں کہ ہم کس طرح کام کرتے ہیں.

خود کار طریقے سے واقعات – معمولی کام کرنے والے علم

اس سطح پر علم مکمل طور پر اندرونی ہے اور ہم اس کے بغیر سوچ کے بغیر استعمال کرتے ہیں. ہم اس علم کا استعمال کرتے ہوئے خود بخود حالات کو ہینڈل کرتے ہیں. خود کار طریقے سے علم کی مثالیں شامل ہیں: • معمول کے انتظام کے معاملات پر عمل کرنے کے اقدامات کے بارے میں علم ہے کہ “ہر وقت ہوتا ہے” اور اس وجہ سے، خاص توجہ کی ضرورت نہیں ہے. • معیار کے حلقوں میں بات چیت اور گروپ کی قیادت کو سنبھالا کرنے کا علم. • سائز اور معاہدے کے ذریعہ فیصلہ کیا جاتا ہے ایک بار سامان کے معاہدے کے لئے احکامات کو برقرار رکھنے کا علم. خود کار طریقے سے انتہائی معمولی اقدامات کی رہنمائی کے لئے استعمال کیا جاتا ہے. جب ہم معلومات کو ترمیم اور دستاویزات یا نظام اور طریقہ کار، ٹیکنالوجی، اور تنظیموں میں، یا فعال، علم پر مبنی نظام میں، یہ مختلف سطحوں کی نمائندگی کرسکتے ہیں. حقیقت میں، تاہم، مختلف علم کے ذخائر کو خاص طور پر مخصوص سطحوں کا انتخاب کرتے ہیں.

کچھ تصوراتی معیار دوسروں سے زیادہ واضح علم رکھتے ہیں

مختلف نظریاتی علم کی سطح پر علم واضح طور پر مختلف ہوتی ہے. جبکہ کچھ اچھی طرح سے جانا جاتا ہے اور واضح طور پر، کچھ بھی نہیں ہے، یا تو اس لئے کہ یہ اچھی طرح سے معلوم نہیں ہے یا اس وجہ سے ہم نے اسے خود کار طریقے سے بنائے جانے کے لئے مرتب کیا ہے. Tacit اور واضح علم کا اندازہ لگایا گیا ہے جس میں ہم نے شناختی شکل 4-9 میں ظاہر کی ہے. جیسا کہ ہم کسی موضوع میں مزید ماہر بن جاتے ہیں، ہم 4-10 شکل میں بیان کردہ تیر کے تیر میں ایک سطح سے علم کو آگے بڑھانا چاہتے ہیں. ابتدائی طور پر ابتدائی طور پر جب ایک موضوع پر معاملہ پیش کیا جاتا ہے (جیسا کہ اعداد و شمار میں بائیں جانب دکھایا گیا ہے)، وہ عام طور پر محدود محدود مثالی علم رکھتے ہیں. تعلیم یا تربیت کی نوعیت پر منحصر ہے، وہ عملی نظام شروع کرتے ہیں، لیکن خود کار طریقے سے کوئی علم نہیں رکھتے. جیسا کہ وہ زیادہ کامیاب ہو گئے ہیں (اعداد و شمار میں دائیں طرف منتقل)، لوگوں کو علم کی اشیاء (تمام سطحوں پر، نہ صرف اوپر سطح پر جیسا کہ اعداد و شمار میں اشارہ) شامل کرتے ہیں. بہتر سے واقف بننے اور علم کو باضابطہ بننے کے عمل میں، وہ کچھ مثالی علم کے لئے اتحادوں کو متحد اور تعمیر کرتے ہیں جس سے یہ منظم علم بن جاتا ہے.

کچھ منظم علم قواعد و ضوابط، اور براہ راست کام کے تصورات میں تعمیر کی جاتی ہے اور عملی طور پر علم بننے کی منتقلی کی جاتی ہے. اس کے علاوہ، لوگ خود کار طریقے سے علم کو بنانے کے لئے کچھ عملی علم کو خود بخود کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں کیونکہ وہ مضامین سے اچھی طرح واقف ہو جاتے ہیں اور یہ معمول بن جاتا ہے.

XIF-١

جیسا کہ ہم سیکھتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ کچھ فیصلے کرنے والے علم عام ہوتے ہیں اور اعلی سطحی منظم علم بن جاتے ہیں اور آہستہ آہستہ مثالی طور پر بھی علم بن جاتے ہیں. ان عملوں کے بارے میں ہماری سمجھ سے، ہم دیکھ سکتے ہیں کہ لوگ اکثر عام طور پر بالکل مختلف علم رکھتے ہیں. مثال کے طور پر، ایک ابتدائی یا فنکار کے لئے مثالی طور پر علم کیا ہے جو ایک ماسٹر کے لئے مشہور معروف علم ہو سکتا ہے – اور یہ بھی ایک گرینڈ ماسٹر کے لئے خود کار طریقے سے علم ہوسکتا ہے.

چار تصوراتی سطح پر تمام ابھارکشیشن سٹرٹا میں پایا جا سکتا ہے

علم کارکنوں کو بہت سے علم کے ڈومینز کے وسیع مفہوم ہیں. ان میں سے کچھ نسبتا کنکریٹ ہیں جبکہ دیگر جدید اور خلاصہ ہیں.

X1F)

 علم کارکنوں اور ہم میں سے اکثر مختلف تجزیہ اور نفسیات سے واقف ہیں. چھ سب سے عام علمی شعبے ہیں: • سوسائٹی، سائنس، عوام وغیرہ کے بارے میں علم اور سوچ کے بارے میں سوچ کے بارے میں معلومات

  • • مجرمانہ کام سے متعلقہ ڈومینز کا علم • ابتدائی کام سے متعلقہ ڈومینز کا علم • نجی معلومات کا علم • ذاتی معلومات زندگی، شوق، وغیرہ.
  • بنیادی بات چیت اور استدلال کی مہارت، بشمول “چلنے،” “بات چیت،” 3 روپے، سماجی مہارت، وغیرہ کی بنیادی معلومات بنیادی جسمانی اور سماجی مہارتوں کے ساتھ ایک شخص کا سب سے زیادہ غیر نفسیاتی اور کنکریٹ علم ہوسکتا ہے. ایک اعلی تجزیہ سٹریٹم پر ہم دونوں پرنسپل اور ملحقہ پیشہ ورانہ ڈومینز کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتے ہیں. ابھی تک ایک اعلی مقام ہمارے ارد گرد دنیا میں عام “عالمی علم” اور بنیادی اصولوں کا علم ہے – چاہے سماجی یا سائنسی. آخر میں، اعلی سطح پر، ہم علم کے بارے میں علم اور سوچ کے بارے میں سوچ سکتے ہیں. یہ ڈومین مذہب، بنیادی عقائد کے پیچھے استدلال اور فلسفہ کو بھی شامل کرتا ہے. ہر سطح پر ہمارے علم کو تمام نظریاتی علم کی سطح پر منعقد کیا جاتا ہے جیسا کہ شناخت 4-11 میں درج ہے. قریب کے معائنہ پر، ہم یہ سمجھ لیں گے کہ عام طور پر علمی علم سے عام طور پر منظم نظام سے زیادہ اور زیادہ تجزیہ کے ساتھ منعقد ہوتا ہے.

معلوماتی ہاؤس محاصرہ کی پیمائش کا ایک طریقہ

ہمیں اکثر موجودہ معلومات کی ضرورت ہوتی ہے یا ضرورت ہے. ایک آسان (بجائے قابلیت) کی پیمائش یہ ہے کہ B + طالب علم ایک سمسٹر گھنٹے میں سمسٹر گھنٹے کے برابر، یا SHE میں برقرار رکھا گیا ہے. اس کا مطلب یہ ہے کہ علم ایک سمسٹر کورس کے برابر ہے 3 SHE، اور 100 SHE سے زیادہ مکمل کالج کی تعلیم میں، اور اسی طرح. نظریاتی طور پر، اگر کوئی شخص بارہ گھنٹوں کا استعمال کرتا ہے، 52 ہفتوں میں سے ہر ایک میں سات دن میں سیکھنے کے لئے، اس میں ایک سال میں 273 شے حاصل کرنا ممکن ہو گا. اسی طرح، 100٪ کارکردگی کے ساتھ کام پر سیکھنے اور مسلسل نئی تعلیم سے مسلسل سامنا کرنا پڑا حالات 125 شے کی کل سالانہ معلومات جمع کر سکتی ہیں. اس طرح کے سیکھنے کی اہلیت واضح طور پر عملی طور پر نہیں ہیں 1 فرض کرتے ہیں کہ ایک سیمسٹر گھنٹہ کی ضرورت ہوتی ہے جس میں ہوم رابطہ کی ضرورت ہوتی ہے، 16 رابطے کے گھنٹوں کے دوران برقرار رہتا ہے.

علم مینجمنٹ بنیادوں: سوچنے کے بارے میں سوچنے –

 کس طرح لوگوں اور تنظیموں کی تخلیق، نمائندگی، اور علم کا استعمال قابل اعتماد لیکن نئے علم کے انتہائی اوپری حدود کو سمجھا جا سکتا ہے جو شخص کسی شخص کو حاصل کرسکتا ہے. جیسا کہ ہم نے تبادلہ خیال کیا ہے، علم مختلف افراد کے ذریعہ مختلف کارکردگی سے حاصل کیا جاتا ہے. کچھ بہت جلدی اور اندرونی طور پر سیکھتے ہیں اور بہت آسان کے ساتھ برقرار رکھتے ہیں. دوسروں کو فوری طور پر نہیں ہے. نتیجے کے طور پر، انفرادی اختلافات علم کی رقم میں ایک شخص کو ایک اہم کردار ادا کرتی ہے. حالات اور مواد کو سیکھنے کے لئے نمائش ایک ہی اہم ہے اور اگرچہ طویل عرصے تک کسی تبدیلی کے ماحول میں معمولی کام انجام دینے پر مجبور ہونے سے بچنے والا ایک چھوٹا سا علم بھی تھوڑا نیا علم حاصل کرسکتا ہے. لوگ بہت سے ڈومینز اور مختلف نظریاتی علم کی سطح پر نئے علم حاصل کرتے ہیں. ابتدائی زندگی میں، ہم بنیادی زندگی کے افعال کے لئے بہت بنیادی معلومات جاننے کے لئے جدوجہد کرتے ہیں – ہمارے اردگرد دنیا، اور اسی طرح چلنے، بات، تفسیر اور ہینڈل کرنے کے لئے کس طرح. بعد میں جب ہم اسکول داخل کرتے ہیں تو ہم “3 روپے” اور اسی طرح کی بنیادی معلومات سیکھتے ہیں.

تاہم، اس دورے کے دوران، ہم ان تمام واقعات کے خلاصہ ذہنی ماڈل بھی تشکیل دیتے ہیں جو ہم دیکھتے ہیں اور سیکھتے ہیں. ہم فیصلے اور توقعات تشکیل دیتے ہیں کہ کس طرح جسمانی دنیا کے کام کرتا ہے اور پیچیدہ ماڈل بناتا ہے جو ہماری باقی زندگی کے لئے ہمارے ساتھ رہتا ہے. بعد میں، ہم اس وقت ہائی اسکول اور کالج میں اعلی درجے کی سیکھنے سے متعلق ہو جاتے ہیں، جب تک کہ ہم اس کام پر سیکھنے شروع کر دیں یا خصوصی تربیتی پروگراموں میں سیکھیں جو ہمارے کام کے ماحول پر توجہ مرکوز کرتی ہیں. یہ سب علم ہمیں نظریات اور نظریات کے ساتھ فراہم کرتا ہے کہ بعد میں زیادہ کنکریٹ بن جاتا ہے جب تک کہ یہ زیادہ تر سیکھنے اور واقفیت کے ساتھ منظم نہیں ہوسکتا ہے، یہ عملی طور پر یا خود کار طریقے سے ہوتا ہے. ممکن ہے کہ کسی شخص کو مختلف نظریاتی علم کی سطح اور مختلف ڈومینوں میں قابلیت سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے، اس طرح انفرادی ‘علم انوینٹری’ کا جائزہ حاصل کرنا ہے. یہ چار کے ساتھ قابل صلاحیت کارکن کے لئے شکل 4-12 میں واضح ہے. کام پر تین سال بعد کالج کی تعلیم بنیادی کام سے متعلقہ ڈومین کے علم کے علاوہ، اس فرد کے قریب قریب ڈومینز کی نمائش ہوتی ہے، لیکن اس علاقے میں “دنیا کے علم،” کے علاقے میں سیکھنا بہت ضروری ہے اور بنیادی میدان میں ایک ورسٹائل ماہر بننے کے لئے .

علم ہولڈرز اور سنجیدگی سے متعلق طرزیں:

لوگ مختلف سنجیدگی سے متعلق سٹائل رکھتے ہیں. کچھ تعداد میں یاد رکھنے اور استعمال کرنے میں جادوگر ہیں. دیگر پہیلیاں حل کرنے میں اچھے ہیں. پیچیدہ تصورات اور پیچیدہ تعلقات کو سمجھنے میں بہت اچھے لوگ ہیں. کچھ لوگ زبان کے بہترین حکم کے ساتھ زبانی ہیں. دوسروں کو بھی بہت ذہین، بہت زبانی نہیں بلکہ بجائے، وہ تصاویر یا تصاویر کے لحاظ سے چیزوں کو دیکھتے ہیں اور تصورات کے لحاظ سے سوچتے ہیں بغیر لیبلز. کچھ حد تک، ہم میموری کے اپنے ماڈل اور ان طریقوں کو سمجھتے ہیں جو ہم علم کو منظم کرسکتے ہیں. مثال کے طور پر، افراد کے طور پر، ہم نے میموری میموری پر قابض میموری کی مدد کر سکتے ہیں؛ واضح، شعور استدلال پر غیر عدم استدلال؛

TransWritten by Dr. Aziz Nizamani

References:

  • Knowledge Management foundations journal
  • Wall street Journal 2011

 

WORK MOTIVATION

WORK MOTIVATION

How to use of Motivational Techniques helps to Employees in Government Department HESCO (WAPDA) of Pakistan as Great work Place.

Back Ground:

HESCO  term Hyderabd Electric supply company  , A company of PEPCO / WAPDA Government of Pakistan.

“Motivation is an invisible Asset & psychological feature to drive the organism in action towards targeted goals with behaviors or reason for act”.

As known common that  government department (HESCO) of Pakistan is ill functional and not achieving their functional business targets due to the lacking of the motivational techniques  which are not developed among the employees , Selected topic as referral on basis of   combined interests  of  employees and in future  will be decreasing unemployment ratio in Pakistan considering due to failure motivation of management in decision making  of the delegated powers  and reasoning  which can be handled by the motivational methods.

The government environment created the jobs for employment as per classification of the job at specific task on specific field and Employees has been spending an amount of their lives at their workstations not only getting the Incentives but for seeking of the satisfaction with their jobs. Motivation is helpful to the employees directing to the accumulating performance on the assignments of the individual level which is optimized as in group performance due to motivational process. In the progressive formations found development via Motivation and caused effected on the performance, Government Employees are not happier at work & requested more satisfaction on job, More absent from jobs and not loyal to the work so nil encourages them to contribute in maximize the development of the Government business .

The Business of Government Department (HESCO) of Pakistan revenues ratio is decreasing day by day due to un motivation but the employees are looking hope. In this proposed covered topic tried to high light the rehabilitation of the Government employees as profitable worker using motivational techniques.

 

Research Design:

  1. Type of Research

The subjected Research of work motivation in the interest of Government employees of the HESCO is compiled in the qualitative research methods on the fundamental stage in which highlighting the data gathering in groups  which are classified in the finance division, administration division, MIS ,technical division, material division of the related  HESCO employees.

The Questions furnished for Government employees of  HESCO as tool.

  1. Is Government support your Allowances?
  2. What you want from your Departments?
  3. Policy,
  4. Workplace
  5. Pensions
  6. Claims

 

  1. Are you satisfied from your job being as government employee?
  2. Why you join Government department?
  3. Goals
  4. Employees Quota
  5. Retirement Benefits

 

  1. The Salary is sufficient for your Monthly Expenditures?

 

 

  1. Research Paradigm (Inductive or Deductive)

The Research Paradigm followed on the constructivist which are focused reality is created by the individuals in groups and discovered the underlying meaning of events and activities based on the Questions in which asked the changes in qualitative method.

 

  1. Nature of Research Study (Descriptive, Explanatory or Exploratory)

The Nature of Research study is Exploratory Research to focusing on the groups which are depend on nature of issues of segments and segregated into two groups.

  1. d) Data Collection Tool/Instrument Which tools will be used for data collection? Why a particular tool is selected?

The Collected data from Government Employees ( Officers & Officials) in which they reflected their needs.

  1. High Salary
  2. High Allowances
  3. Good Social acknowledgment
  4. Freedom of Work Rotation
  5. Benefits to be work in team
  6. Self Target Selection
  7. Participations in Decisions
  8. Life & Education Insurance at standard Rates
  9. Frequently merit Tanning

 

  • To optimize the survey among Employees the Questioner paper  used as collection of data tool on Likert scale Measuring tool to get the data for Research use.
  • The frequency of Likert Measurement tool offered to the employees needs as agree to disagree variation scaling as friendly and freely by them selection .

 

Hypothesis of study:

  • Employees are less motivated by External Factors
  • Employees are highly motivated by Internal Factors
  • Employees are high motivated by supporting work environment
  • Employees are less motivated by willingness in work
  • Employees are more important than gender ,age ,education
  • Employees are less hierarchy level is less important
  • Employees are less motivated to work in family
  1. e) Subjects/Participants

The classified participants from Managers to the Line Staff from the finance division, administration division, technical division, material & MIS division of the related  HESCO employees.

  1. What will be the target population?

The Questioner contains of five work motivation segments to the government employees needs and the major questions from the employees of HESCO Distribution company under of the water & power development authority that work in Technical, Commercial, Finance, and Material, legal, administration staff and classified into two major groups 1. Who worked in field 2. Who worked out of field or table work.

 

 

  1. Whether sampling frame will be used or not? (Based on scope of study)

Constructed frame used into this targeted research and Sampling directly taken from the constructed frame to supplement as the Qualitative research the actual sampling and recruitment used .

iii. What type of sampling technique will be used? And Why?

In subjected research the two groups randomized design to use on probability method in Simple Randomly sampling technique from the data in which controlled & the excremental group treatment separately.

And because

  • each unit has equal opportunity to be selected
  • Chances determine which item should be included.

 

  1. What will be the sample size? And Why?
  • The sample size will be N= 500
  • Targeted population is known

 

 

References:

  1. Bryman A (2001), ‘Social Research Methods’, Oxford University Press.
  2. Elliot D (1984), Conversion to the Postcode Address File as the main household survey sampling frame’ ONS Survey Methodology Bulltein (SMB) No. 16.
  3. Foster K (1994), ‘The coverage of the Postcode Address File as a sampling frame’. ONS SMB No. 34.
  4. Glasser B.G. and Strauss A.L. (1967), ‘The Discovery of Grounded Theory: Strategies for Qualitative Research’. Chicago: Aldine Publishing Company.

by Dr. Aziz Nizamani

Preventing: Food Insecurity in Pakistan

Related imageCase Study : 

Preventing the Crisis of “Food Insecurity in Pakistan”

Background:

The people of earth have been facing the changes of climate since beginning and influences their living style with adaptation of the variable changes under social and economic terms on individual and collective basis with speedy mode. Due to the rapid development of the modern society and the changes of the climate challenges are involved the new thinking for crisis management for agriculture growth development with health standards for food and surviving in the extreme weather conditions because people know that the final frontier for their lives have depend only earth till substitute So adopting the changes with effective scientific reasoning are only solutions for economic, social and personal livelihoods under roof of theory to experience.Image result for food crisis in pakistan

Flood effected women need food in Pakistan

The global changes reflected the main sources of the Agriculture of every corner of world included the Pakistan, it is confirmed that extreme weather changes major causes are by human that is pollution which directly impacted on earth eco system badly and rapid increasing of population frequently.

Image result for food crisis in pakistan

The Thar Sindh, People are forbidden to helpless for food , water, health

In Pakistan, another main reason of the cartelize system for generating capital to play with health issues and uncontrolled of the implementation of the government polices physically which are directly political issue and bad governance dancing openly around ill system and people of Pakistan also not performing their real positive role for healthy society for future and running in race for short time capital gain. As the sugar mill are honors are seated in Upper Legislation team, Tomatoes and Poultry products rates are fixed by the Lower Legislators. Agricultural equipment and loans terms are difficult for ordinary farmers and granted to the relatives of the in Government aristocrats and more over millions loans not recovered but wave offed using bogus issues under political pressure. The disequilibrium distribution of resources for the agricultural development and uncertainty of the electricity tariff for agricultural improvement. Open violation of the consumers’ rights for food security.

In the Case there are two segment:

  • Extreme weather conditions | Major Causes
  • The Extreme weather conditions becomes as international issue to threaten world and scientific development in the industries, pollution spread outed in the shape changes earth Eco system. whereas humans are cutting of the trees in resultant the melt downing of the glaciers.
  • The race of super powers for nuclear projects.
  • Synthetic weathers weapons initiated to change the earth’s natural weathers system by super powers.
  • And agricultural problems as a cause of food insecurity crisis in Pakistan
  • The uncertainty in the government policies regarding Agricultural development.
  • Low profile functions of the Consumer rights.
  • Food Cartels monopoly by the industrial, suppliers and support of bad government.

Recommendations:

Points for measurements in Extreme Weather conditions and Agricultural problems as a cause of food insecurity crisis in Pakistan:

“Constitute the National Bill for Handling the Extreme Weather conditions & Food Security for Pakistan” under bellow pints:

  1. To save the water resources and improvement for reducing the water pollution and setting for the more water ways and oceans for the conservation and eye on global warming effected the oceans system and changes the routes of the rivers and dryness of the lakes in Pakistan.
  2. To Reduce communities’ exposure and vulnerability to climate related extreme weather events such as strong storms, flooding and wild fires. To regulate the Garbage burning by the people of Pakistan frequently every day by the development of awareness among people and stick reinforcement rules implementations.
  3. To Protect and restoring with promoting sustainable use of terrestrial Eco system with sustainable to manage forests and trees.
  4. For Decrease national level reliance on fossil fuels, encouraging and double the global rate of improving in energy efficiency for next ten years on experimental basis.
  5. To develop the brain storming for the better share technologies, innovations and policies between private and public sectors development of nation on practical approach with accord renewable effective energy and clean fossil fuel technologies.
  6. To develop the policy with the integration of climate changes measurements into national and international policies planning on strategic management.
  7. To development of the people learning and transform the knowledge with participation of student’s subject due to elementary classes about climate changes mitigation and skills development as brain storming in their own interest of health and for better Eco system.
  8. To generate the more ways for capital and flow of capital to development of the country with synchronization of the public and private sector.
  9. To Enhance the Disaster Management Cells on ground levels with related departments collaborations and conduct the small scale drills program.
  10. To nominate the right person on right job on merit for optimized the best results.
  11. Improve the poor economic policies and environmental program for food security terms providing.
  12. To control programs on rapid population growth and a poor human resources base like China implemented law for population regulation which related to the food resources and security.
  13. To conjugate the effective performance among civil strife and absence of the good governance in Pakistan.
  14. To establish the Seasoning between weak federal and provincial institutions and donor coordinates.
  15. Endorses the context of the utilization of the low meat and purchasing of the commodities under the limit to regulate the inflation in market.
  16. Skills development program for agricultural development and ensure the availability of the equipment and alternatives of the energy resources and agricultural loans on flexible terms with the engro agricultural methods.
  17. ** Promote the Growing of the vegetables and fruits  on  domestic level for the people houses which can complete the small scale demand of the food for the daily usage and rotation of the vegetables and fruits in society  which tends to improve the Eco system and awareness of society. And the Government should facility for program and provide the seeds, methods, promotions using national celebrities, sports persons to raising the Religious and human rights context for rapid response from the people to reducing and preventing the food crisis in Pakistan.

Thanks form,   Dr. Aziz

PM India Modi is playing with indian’s people Life. No damage found in Pakistan. No Terrorist camps in Bala Kot. Visit International Community !!!

Image may contain: one or more people, text that says 'Narendra Modi INDIAN VIOLATION IN Prime Minister of India PAKISTAN Indian airplanes crossed the is playing with Indian Line Of Control (LoC) on early Peoples Life for Sake of Tuesday, violating Pakistan Power in his Elections only airspace BALA KOT MANSHERAH KPK. The Indian Air Force's Mirage 2000 aircraft escaped after Pakistan Air Force's F-16 fighter were scrambled. NO DAMAGES FOUND IN INDIAN AIR STRIKE NOW PAKISTAN SHOULD COUNTER ATTACK ON'


INDIAN VIOLATION IN PAKISTAN Indian airplanes crossed the Line Of Control (LoC) on early Tuesday, violating Pakistan airspace BALA KOT MANSHERAH KPK.The Indian Air Force’s Mirage 2000 aircraft escaped after Pakistan Air Force’s F-16 fighter were scrambled.NO DAMAGES FOUND IN INDIAN AIR STRIKENOW PAKISTAN SHOULD COUNTER ATTACK ON INDIA

Role of Knowledge Management in Urdu

Role of Knowledge Management in Anticipating the Future for Businesses

کاروبار کے لئے مستقبل کی توقع میں علم مینجمنٹ کی کردار

مستقبل میں ہمیں زیادہ سے زیادہ وقت حیرت سے کیوں لے جاتا ہے؟ سیلز اور مارکیٹنگ کی شرائط کے لحاظ سے کاروباری اداروں کے سب سے اوپر کیوں کاروبار کرتے ہیں، خود کو قطعی طور پر نیچے چند سالوں سے نیچے ڈھونڈتے ہیں؟ کچھ معروف کاروباری رہنماؤں نے آنے والی رجحانات کی توقع نہیں کی ہے جبکہ دوسروں کو مکمل پیمانے پر کاروباری مواقع میں تبدیل کرنے سے قبل رجحانات کے نچلے حصے میں پھنسے ہوئے ہیں. مثال کے طور پر، مائیکروسافٹ کے افسانوی بل گیٹس کو بس انٹرنیٹ کو بینڈوگن اور موبائل انقلاب پر بھی چھوڑا جانا تھا اور اس کے نتیجے میں مائیکرو مائیکروسافٹ رجحانات دونوں پر نقد کرنے میں قاصر ہیں. دوسری جانب، مرحوم اسٹیو جابز نے مستقبل کے دیگر کاروباری رہنماؤں سے بہتر مستقبل کی پیشکش کی. ایک دوسرے مثال کے ساتھ چل سکتا ہے. تاہم، نقطہ یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ بار بار نہیں، باخبر فیصلے کرنے کے لئے ضروری اعداد و شمار اور علم موجود ہے مستقبل میں متوقع ہونے کے ضائع ہونے والے فاتحین کو کیا فرق ہے. مثال کے طور پر، اگر کوئی خاص کاروبار پچھلے رجحانات اور واقعات کو ختم کرسکتا ہے اور مستقبل کو سمجھا سکتا ہے، تو اس کا معاملہ صحیح فیصلے اور اعداد و شمار کرنے کے لئے ہے

ڈیٹا اور معلومات اور کلومیٹر سسٹم کے کردار کے درمیان فرق
یقینا، خود کی ڈیٹا غیر معنی ہے اگر یہ معلومات میں تبدیل نہیں ہوسکتی ہے. اعداد و شمار اور علم کے درمیان فرق یہ ہے کہ سابق خام مال ہے اور بعد میں تیار شدہ مصنوعات ہے. زندگی میں بہت سے چیزوں کے ساتھ، خام مال کو ختم ہونے والی مصنوعات میں تبدیل کرنے کی ضرورت ہے اگر انہیں استعمال کیا جائے. اسی طرح، کاروباری اداروں کو صرف اعداد و شمار جمع کرنے کی ضرورت نہیں ہے بلکہ اسے قابل استعمال اور بامعنی معلومات میں تبدیل کرنے کی بھی ضرورت ہوتی ہے، اگر وہ پیٹرن اور چھپے ہوئے کنکشن کا پتہ لگائے جو مستقبل کے بارے میں باخبر فیصلے کرنے میں کامیاب ہوجائے گی. یہ ہے جہاں ایک مؤثر اور مؤثر علم کے انتظام کے نظام کا کردار منظر میں داخل ہوتا ہے. علم مینجمنٹ سسٹم میں سرمایہ کاری کرکے جو آدانوں کے ساتھ سب سے اوپر مینجمنٹ فراہم کرسکتے ہیں اور مستقبل کے پیٹرن کو ظاہر کرنے کے ماضی کے رجحانات کو نکال سکتے ہیں، علم مینجمنٹ سسٹم کاروباری اداروں کی کامیابی اور ناکامی کے درمیان فرق بنا سکتے ہیں. اس کے علاوہ، ایک وسیع علم کے انتظام کے نظام کو بھی تنظیم میں اعداد و شمار کو متحرک اور منظم کرنے میں مدد ملے گی اور مستقبل کی پیش گوئی کے قابل ہونے کے لئے کافی معلومات کے ساتھ فیصلہ ساز سازوں کو فراہم کرے گی

کچھ ایمرجنسی والے اوزار اور تکنیک
کہا گیا ہے کہ، یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ گٹ جذبات اور انضمام مستقبل کے بارے میں فیصلے کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں. یقینا، یہ مہارت اور علامات ایک مدت میں تیار کی جاتی ہیں اور عام طور پر تجربے اور ماضی کی کوششوں کی پیداوار ہیں. دوسرے الفاظ میں، ماضی کی نگرانی اور اس سے سیکھنے کی طرف سے، مستقبل مستقبل کو سننے میں ایک “چھٹے احساس” تیار کرسکتا ہے. اگر یہ آپ کے لئے ستراجی کی حیثیت سے لگتا ہے، توقع ہے کہ بگ ڈیٹا انقلاب مستقبل کی پیشکش کی زیادہ سے زیادہ اسی طرح کے پہلوؤں کو آپ سے اپیل کرنا چاہئے. اس کے علاوہ، پیشن گوئی کے تجزیات کے ابھرتی ہوئی سائنس ایک سگنل اور شور کے درمیان فرق کرنے کے لئے ایک آلہ فراہم کرتا ہے. یہاں یہ مطلب یہ ہے کہ صرف اعداد و شمار اور معلومات کافی نہیں ہوسکتی ہیں اور اس سے مستقبل کی پیشن گوئی اور فائدہ اٹھانے کے لئے اسے “اضافی ایکس فیکٹر” کی ضرورت ہوتی ہے. اس آرٹیکل نے اس موضوع میں ابھرتی ہوئی شعبوں کو سروے کیا ہے اور ان میں سے ہر ایک عناصر بعد میں تفصیل سے تبادلہ خیال کریں گے. یہاں ریاستی طور پر یہ کافی ہوگا کہ کاروباری اداروں کو اعلی درجے کے علم مینجمنٹ سسٹم میں سرمایہ کاری پر سنجیدگی سے سنبھالنا پڑے گا تاکہ وہ انہیں جنات کے کندھے پر مستقبل میں نظر آنے کے قابل بنائے

خیالات کا اظہار
آخر میں، یہ یہ ثابت کر سکتا ہے کہ یہاں پیش کیے جانے والے ان آلات اور ماڈل علم مینجمنٹ سسٹم کو مستحکم ہیں. اس سے ہمارا جواب یہ ہوگا کہ علم مینجمنٹ سسٹم مستقبل کی پیشکش کرنے کے قابل ہونے کے خوابوں کو درست کرنے میں پہلا مرحلہ ہے اور وسائل کے اعداد و شمار جیسے بڑے اعداد و شمار، پیشن گوئی تجزیات، اور دیگر نظاموں کو علم کے سب سے اوپر پر بنایا جا سکتا ہے

Dr. Aziz Nizamani

FInd More #DrNix